Jo Kehta Tha Tum Bin Guzaara Nahi'N Hai / جو کہتا تھا تُم بن گزارا نہیں ہے

 جو کہتا تھا تُم بن گزارا نہیں ہے
وہی شخص دیکھو ہمارا نہیں ہے

کبھی ہم کو ہم سا ملا ہی نہ ساتھی
 کبھی ہم نے خود کو  سنوارا نہیں ہے

سبھی کو دلاسے دیا کرتا تھا جو
اُسی کا کوئی اب سہارا نہیں ہے

حسیں ہوتی ہے وہ خوابوں کی دنیا
کہ اس پر کسی کا اجارا نہیں ہے

میں نفرت کو الفت پڑھانے چلا ہوں
مرے حق میں کوئی ستارہ نہیں ہے

وہ اک عمر سے چل رہا ہے مسلسل
وہ تھک تو چکا پر وہ ہارا نہیں ہے

ترے غم کے دفتر پڑھے کون مہتاب
یہاں کون رنجوں کا مارا نہیں ہے

بشیر مہتاب

jo kehta tha tum bin guzaara nahi hai
wohi shakhs dekho hamara nahi hai

kabhi hum ko hum sa mila hi na sathi
kabhi hum ne khud ko sanwara nahi hai

sabhi ko dilasey diya karta tha jo
usi ka koi ab sahara nahi hai  

haseen hoti hai wo khawaboo'N ki duniyaa'N
ke us par kisi ka ijara nahi hai

mai nafrat ko ulfat padhaney chala hu
mere haq mai koi sitara nahi hai 

wo ek umar se chal raha hai musalsal
 wo thhak to chuka par wo haara nhi hai

tere ghum ke daftar padhey kon Mehtaab
yahaan kon rannju ka maara nahi hai

Bashir Mehtaab

Comments

POPULAR POSTS:

Gazal -Bachpann / غزل - بچپن

Mera Nahi Raha Tu, Mai Tera Nahi Raha / میرا نہیں رہا تُو, میں تیرا نہیں رہا

Haseen Dil Ruba Chandni Gulbadan Hai / حسیں دلربا چاندنی گل بدن ہے

Yaar Be-Khabar Ho Tum / یار بے خبر ہو تم

Ye Kon Aagaya Hai Ye Kaisi Bahaar Hai / یہ کون آگیا ہے یہ کیسی بہار ہے