AerooN GerooN Ko Bojh Lagtay Hai / ایروں، غیروں کو بوجھ لگتے ہیں

ایروں، غیروں کو  بوجھ لگتے ہیں
جانے کتنوں کو بوجھ لگتے ہیں

آپ اِس اُس  کی بات ہی نہ کریں
ہم تو  اپنوں کو  بوجھ لگتے ہیں

ہے یہی رونا   اب گلستاں کا
پھول کلیوں کو بوجھ لگتے ہیں

ایک مدت سے میں نہیں سویا
خواب آنکھوں کو بوجھ لگتے ہیں

اُگ چکے ہیں ہمارے جسموں پر 
سر! جو تکیوں کو بوجھ لگتے ہیں

آپ سے ایک پل نہیں کٹتا
ہم تو گھنٹوں کو بوجھ لگتے ہیں

جانتا ہوں  کہ  آج  میرے  قدم
تیری گلیوں کو  بوجھ لگتے ہیں

ایک  آنگن  میں رہنا مشکل ہے
رنگ پھولوں کوبوجھ لگتےہیں

 کیسے کوئی غزل  کہے مہتاب
غم بھی لفظوں کو بوجھ لگتے ہیں

ـــــــــــ۔ بشیر مہتاب
 ــــ
AerooN  gerooN ko bojh laghtay hain
jaanay kitnooN ko bojh laghtay hain

aap iss uss ki baat hi na kareN 
hum to apnooN ko bojh laghte hain

hai yehi rona ab gulistaan ka
phool kaliyooN ko bojh laghte hain

eik mudat se mai nhi sooya 
Khawab ankhooN ko bojh lghte hain

ugg chukay hain hamarey jismooN par
sarr! jo takyooN ko bojh laghte hain

aap se eik pall nhi kaT-ta
hum to ghenTooN ko bojh laghte hain

jānta hu ki aaj mere qadam
teri ghalyooN ko bojh laghte hain

eik aanghan mai rehna mushqil hai
rangg pholooN ko bojh laghte hain

kaise koi gazal kahae mehtaab
gham bi lafzooN ko bojh laghte hain

- Bashir Mehtaab

Comments

POPULAR POSTS:

Gazal -Bachpann / غزل - بچپن

Mera Nahi Raha Tu, Mai Tera Nahi Raha / میرا نہیں رہا تُو, میں تیرا نہیں رہا

Haseen Dil Ruba Chandni Gulbadan Hai / حسیں دلربا چاندنی گل بدن ہے

Yaar Be-Khabar Ho Tum / یار بے خبر ہو تم

Sab ki mojudgi samjhta hai/ سب کی موجودگی سمجھتا ہے