Asifa / آصفہ


زمیں رو رہی آسماں رو رہا ہے
ترے غم میں سارا جہاں رو رہا ہے 

Zameeñ ro rahi āsmāñ ro raha hai
Tere gamm maiñ sāra jahāñ ro raha hai

صدا آ رہی آصفہ آصفہ کی 
 ترے حال پر یہ زماں  رو رہا ہے
 
Sadha aa rahi Aasifa Aasifa ki
Tere haal par ye zamāñ ro raha hai

کہاں لے گئی تجھ کو فرقہ پرستی 
ترا ایک اک مہرباں رو رہا ہے 

Kahāñ lay gayi tujh ko firqa parasti
Tera aek ek mehrabāñ ro raha hai

کہیں پھول آئے کہیں پھول بکھرے
تمہارے لئے  گلستاں رو رہا ہے 

Kaheeñ phool aaye kaheeñ phool bikhray
Tumharay liye gulsitāñ ro raha hai

یہ کیسا چنا ہے گلِستاں کا مالی 
یہ پھولوں کے غم میں کہاں رو رہا ہے 
 
Ye kaisa chuna hai gulistaa’N ka maali
Ye phoolūñ kay gham meiñ kahāñ ro raha hai

ترے حال پر رحم آیا  نہ اُن کو
مرے دل  سے اُٹھتا دھواں رو رہا ہے 

Tere haal par reham aaya na un ko
Mere dil se uth’ta dhuwāñ ro raha hai

عذاب آ نہ جائے کہیں آسماں سے
ترے دکھ میں بچہ ، جواں رو رہا ہے

Azaab aā na jāye kaheeñ āsmāñ say
Tere dukh meiñ bacha, jawāñ ro raha hai

بشیر مہتاب
Bashir Mehtaab

Comments

POPULAR POSTS:

Gazal -Bachpann / غزل - بچپن

Mera Nahi Raha Tu, Mai Tera Nahi Raha / میرا نہیں رہا تُو, میں تیرا نہیں رہا

Haseen Dil Ruba Chandni Gulbadan Hai / حسیں دلربا چاندنی گل بدن ہے

Yaar Be-Khabar Ho Tum / یار بے خبر ہو تم

Ye Kon Aagaya Hai Ye Kaisi Bahaar Hai / یہ کون آگیا ہے یہ کیسی بہار ہے